نہیں وہ شخص اتنا سن نہیں ہے … غزل … آزاد حسین آزاد

Spread the love

نہیں وہ شخص اتنا سن نہیں ہے
ہمیں میں شاعری کا گن نہیں ہے

محبت بوجھ بنتی جا رہی ہے
ترا احساس بھی خوش کن نہیں ہے

کٹے گا اور پھر بڑھنے لگے گا
تعلق ہے کوئی ناخن نہیں ہے

تمہارے ذکر پر چونکا ہے،،، دیکھا
یہ بادہ خوار اتنا ٹن نہیں ہے

ہمارے مسئلے یوں ہی رہیں گے
ہمارے پاس اذن کن نہیں ہے

غزل کی طرز پر دھڑکیں گے یکسر
دلوں کی اور کوئی دھن نہیں ہے

آزاد حسین آزاد

نہیں وہ شخص اتنا سن نہیں ہے … غزل … آزاد حسین آزاد” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں