لاک ڈاؤن میں رومیو، جولیٹ کی انٹری، پہلی نظر کی محبت کا پہلا نتیجہ موصول

Spread the love

یہ زمانہ حال کے رومیو اور جولیٹ کی کہانی ہے۔

کورونا سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک اٹلی کے شہر ویرونا میں مکمل لاک ڈاؤن کے دوران ایک جوڑا نظریں چار ہوتے ہی ایک دوسرے کی محبت کا اسیر ہو گیا۔
38 سالہ مائیکل ڈی الپاؤس اور 39 سالہ پاؤلہ ایگنیلی لاک ڈاؤن کے دوران ایک دوسرے کے پڑوس میں رہ رہے تھے جہاں وہ اپنی اپنی عمارت کی بالکونیوں میں ہر روز سرِشام چھ بجے موسیقی سے لطف اندوز ہونے کے لیے آتے تھے۔
اس جوڑے کے مطابق یہ بالکونیوں سے پہلی نظر میں ہونے والی محبت تھی۔
اپنی بالکونی میں بیٹھ کر پاؤلہ ایگنیلی کی بہن روزانہ وائلن بجاتی تھیں۔ پاؤلہ کی بہن پروفیشنل وائلن بجاتی ہیں۔ اور جس روز جوڑے نے ایک دوسرے کو پہلی مرتبہ دیکھا اور محبت ہوئی اس روز پاؤلہ کی بہن نے آس پڑوس کے لوگوں کو محظوظ کرنے کے لیے ’کوئینز وی آر دی چیمپیئنز‘ گانے کے سُر وائلن پر بکھیرے اور پڑوسیوں سے داد موصول کی۔
پاؤلہ نے بی بی سی ریڈیو فور کے پروگرام ’ٹوڈے‘ میں بتایا کہ ’میں اپنی بہن کو وائلن بجاتے ہوئے دیکھنے کے لیے اپنی بالکونی پر آئی تو میں نے مائیکل کو سامنے والی عمارت کی بالکونی میں کھڑے دیکھا۔ مجھے احساس ہوا کہ وہ میرے دوست کا بھائی ہے اور میں نے کہا ’کیا خوبصورت آدمی ہے۔‘
جب موسیقی ختم ہوئی تو مجھے انسٹاگرام پر ایک پیغام موصول ہوا۔ یہ مائیکل کی جانب سے بھیجا گیا تھا اور اس میں لکھا تھا کہ ’میں لوو اِن دی ٹائم آف کورونا کے عنوان سے پوری کتاب لکھ سکتا ہوں۔‘
انھوں نے بتایا کہ ’اس کے بعد ہم اس رات بہت دیر تک ایک دوسرے سے باتیں کرتے رہے۔ ہمیں احساس ہوا کہ ہماری بہت سے اقدار مشترک ہیں اور یہ مشترکہ اقدار ہمارے رشتے کو مضبوط بنیاد فراہم کریں گی۔‘

اپنا تبصرہ بھیجیں