شعیب اختر نے قانونی مشیر تفضل رضوی کے نوٹس کا جواب دےدیا

Spread the love

سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے قانونی مشیر تفضل رضوی کے نوٹس کا جواب بھجوا دیا۔
سابق کرکٹر شعیب اختر کا کہنا ہے کہ تفضل رضوی کی جانب سے ہرجانے کا نوٹس غیر موثر ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی سی بی اور تفضل رضوی کے بارے میں بیان رائے عوام کے مفاد کے لیے تھی۔
شعیب اختر نے کہا کہ نشان دہائی کرنے کا مقصد پی سی بی کی کوتاہیوں کو مستقبل کے لیے بہتر کروانا ہے۔
واضح رہے کہ ریکارڈ ساز سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے پی سی بی کی جانب سے عمر اکمل پر 3 سالہ پابندی کی مخالفت کی تھی اور کہا تھا کہ بورڈ نے دراصل عمر اکمل پر غصہ نکالا ہے۔

یہ بھی پڑھیے: شعیب اختر کو قانونی مشیر کےخلاف نامناسب الفاظ کا استعمال مہنگا پڑ گیا

اس موقع پر شعیب اختر نے ماضی کے کیسز پر بھی تبصرہ کیا اور کہا کہ پی سی بی کے قانونی مشیر تفضل رضوی تمام کھلاڑیوں کے کیسز اُلجھاتے ہیں، وہ ماضی میں مجھ سے بھی کیس ہار چکے ہیں۔
اس کے جواب میں پی سی بی کے لیگل ایڈوائزر تفضل رضوی نے کہا تھا کہ شعیب اختر نے سوشل میڈیا کے ذریعے میرے خلاف غلط باتیں کی ہیں اور میں اب سائبر کرائم ایکٹ کے تحت کارروائی کے لیےایف آئی اے کو درخواست دے رہا ہوں۔
تفضل رضوی کا کہنا تھا کہ سوشل میڈیا کے ذریعے بیرون ملک بھی شعیب اخترکے ریمارکس کو دیکھا اور سنا گیا ہے، میں ان کے خلاف بیرون ملک بھی قانونی کارروائی کروں گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں